اجتماعی قبریں کھودی جا رہی ہیں تاکہ لوگوں کو ان قبروں کا خوف دلا کرانہیں گھروں میں قید کیا جا سکے۔

دنیا بھرمیں پھیلنے والے کرونا وائرس کے باعث لوگوں کو گھروں کی کوشش کی جا رہی ہے مگر مسلسل لاک ڈائون سےتنگ لوگ سڑکوں پر نکل جاتے ہیں۔ یوکرین میں حکام نے لوگوں کو گھروں میں رکھنے کا ایک انوکھا طریقہ اختیار کیا ہے۔

خبر رساں اداروں کے مطابق یوکرین کے مصروف ترین سمجھے جانے والے شہر ڈنیبرو میں لوگوں کو گھروں میں رکھنے کی ترغیب دلانے کے لیے اجتماعی قبریں کھودی جا رہی ہیں تاکہ لوگوں کو ان قبروں کا خوف دلا کرانہیں گھروں میں قید کیا جا سکے۔

ڈنیبرو کے میئر نے بتایا کہ شہر کے قبرستانوں میں 615 اجتماعی قبریں کھودی گئی ہیں اور دو ہزار تابوت تیار کیے گئے ہیں۔ ڈنیبرو میں کرونا کے متعدد کیس سامنے آئے ہیں مگر ابھی تک کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

اس اقدام کی شروعات میئر بورس فلاٹوف نے کی ہے۔ وہ ایک امیر کھلے ذہن اور سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر بہت متحرک کاروباری شخصیت ہیں۔ اُنہوں نے 2 اپریل کو اپنے فیس بک پیج پر اجتماعی قبروں کی تصاویر پوسٹ کرنے کے ساتھ لکھا کہ یہ ان لوگوں کے لیے تیاری ہے جنھیں ابھی تک ادراک نہیں کہ انہیں اپنی اور دوسروں کی جان بچانی ہے۔ہم ان کے لیے بدترین کی تیاری کر رہے ہیں۔

زندگی اور موت کا معاملہ

ڈنیبرو کے میئر نے کہا کہ بلا مبالغہ کرونا زندگی اور موت کا مسئلہ ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے لاک ڈائون کی خلاف ورزی کرنےوالوں کو 570 یورو کے مساوی جرمانہ کرنے کا بھی عندیہ دیا۔ جارجیا جیسے غریب یورپی ملک میں جرمانے کی یہ رقم بہت بڑی ہے۔

خیال رہے کہ ڈنبیرو شہرمیں اب تک کرونا کے 13 کیسز سامنے آئے ہیں جب کہ پورے ملک میں 1462 کیسز کا اندراج کیا گیا جب اور 45 افراد کی اموات ہوئی ہیں۔

مصنف ایان ویلاتوف جو ایک مقبول اور مشہور عوامی شخصیت ہیں کا کہنا ہے کہ ہمارے شہر کے میئر کو ایسا کرنےکا حق ہے۔ وہ قبروں کا خوف دلا کر کرونا سے لوگوں کو بچانے کی کوشش کررہےہیں۔اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ اس معاملے کو کتنا سنجیدہ لیتے ہیں۔

(Visited 68 times, 1 visits today)

Also Watch

Comment (9)

  1. Pingback: cialis price
  2. Pingback: cialis pill
  3. Pingback: Canadain viagra
  4. Pingback: cheap viagra
  5. Pingback: viagra generic
  6. Pingback: pills for erection

LEAVE YOUR COMMENT