اسد عمر کی تیار کردہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کا مسودہ مسترد

وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ حفیظ شیخ نے سابق وزیر خزانہ اسد عمر کی تیار کردہ ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کا مسودہ نقائص کی نشاندہی کے ساتھ مسترد کر دیا۔

مشیر خزانہ کی سربراہی میں دوسرے روز بھی اجلاس میں حتمی فیصلہ نہ ہو سکا، جبکہ اثاثے ظاہر کرنے کی اسکیم ایک بار پھرمؤخر کر دی گئی۔

اجلاس میں ایف بی آر حکام مشیر خزانہ کو ٹیکس ایمنسٹی اسکیم کے قواعد و ضوابط طے کرنے سے متعلق مطمئن نہیں کر سکے۔

مشیر خزانہ نے ایف بی آر کو ٹیکس ریٹس کی کیٹگریز نصف درجن سے کم کرکے 2 سے 3 تک محدود کرنے کی ہدایت کر دی۔ حفیظ شیخ نے ہدایت کی کہ ایمنسٹی اسکیم کو سادہ، پر کشش اور قابل عمل بنائیں، اسکیم ایسی ہو جس سے معیشت کو دستاویزی شکل دی جاسکے۔

ن لیگ کے دور میں سال 2018 کے دوران متعارف کرائی گئی ایمنسٹی اسکیم سے حکومت کو 120 ارب روپے حاصل ہوئے تھے، جبکہ نئی اسکیم سے ٹیکس آمدن بڑھنے کے ساتھ فائلرز کی تعداد میں اضافہ بھی متوقع ہے۔

وزارت خزانہ مجوزہ ایمنسٹی اسکیم کے دائرہ کار، مدت اور ٹیکس ریٹس میں بہتری کی سفارشات کے ساتھ نیا مسودہ حتمی منظوری کیلئے جلد وفاقی کابینہ میں پیش کرے گی۔ اس سے پہلے ٹیکس، بینکنگ ماہرین اور کارباری طبقے سے مشاورت بھی کی جائے گی۔

(Visited 81 times, 1 visits today)



Also Watch

LEAVE YOUR COMMENT