افغان طالبان نے امن مذاکرات کی حکومتی پیشکش مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان سے غیرملکی افواج کے نکلنے تک کوئی کوئی مذاکرات نہیں ہوں گے۔

افغان حکومت سے کوئی مذاکرات نہیں ہوں گے‘ طالبان

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغان طالبان کے ترجمان ذبیع اللہ مجاہد نے اپنے بیان میں امن مذاکرات کی پیشکش کو ایک بار پھر مسترد کرتے ہوئے افغان حکومت کو کٹھ پتلی قرار دے دیا۔

ترجمان کے مطابق افغان سرزمین سے غیرملکی افواج کے نکلنے تک حکومت سے کوئی مذاکرات نہیں ہوں گے۔

افغان طالبان کی قیادت کی جانب سے متعدد بار امن مذاکرات میں دلچسپی کا اظہار کیا لیکن وہ امریکہ کی حمایت یافتہ افغان حکومت سے مذاکرات سے انکار کرتے رہے ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ 2 جون کوافغان طالبان نے خفیہ امن مذاکرات کے حوالے سے امریکی کمانڈر جنرل نکلسن کے بیان کی تردید کی تھی۔

امریکی کمانڈر جنرل جان نکلسن نے دعویٰ کیا تھا افغان حکومت اور طالبان کے درمیان خفیہ مذاکرات ہورہے ہیں جن میں ممکنہ فائربندی کے موضوع پربات چیت کی جا رہی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ افغان طالبان نے عید الفطر کے موقع پر تین روزہ جنگ بندی کا اعلان کیا تھا، افغانستان کی تاریخ میں 17 سال بعد مسلح شدت پسندوں کی جانب سے اس طرح کا اعلان کیا گیا تھا۔

(Visited 57 times, 1 visits today)

Also Watch

LEAVE YOUR COMMENT