انسان نیند سے اٹھنے کے 5 منٹ بعد خواب کا بیشتر حصہ کیوں بھول جاتا ہے

سڈنی : (ویب ڈیسک) آسٹریلیا میں ہونے والی ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ انسان نیند سے اٹھنے کے 5 منٹ بعد خواب کا بیشتر حصہ بھول جاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق انسانی عقل کا خوابوں کے ساتھ سفر اس وقت شروع ہوتا ہے جب وہ گہری نیند میں چلا جاتا ہے مگر عجیب بات یہ ہے کہ بیدار ہوتے ہی انسان اپنے خواب کا بیشتر حصہ بھول جاتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ انسان نیند سے اٹھنے کے 5 منٹ کے بعد خواب کا بیشتر حصہ بھول چکا ہوتا ہے جبکہ 10 منٹ گزرنے کے بعد خواب کا 90 فیصد حصہ ذہن سے محو ہو جاتا ہے۔

آسٹریلیا کی ایک یونیورسٹی کے ماہرین نے اس بات پر تحقیق کی ہے کہ آخر کیا وجہ ہے کہ انسان اپنی نیند سے جاگتے ہی اپنے خواب بھول جاتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ماہرین اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ انسانی دماغ کے متعدد حصے ہیں جو بیک وقت نیند میں نہیں جاتے بلکہ دماغ کے کچھ حصہ سوتے ہیں تو کچھ حصہ جاگ رہے ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں :نیند نہیں آرہی؟ تو یہ چند حیران کن طریقے آزمائیں

ماہرین کا کہنا ہے کہ انسان کے دماغ کا ایک حصہ محدود یادداشت اور دوسرا حصہ مستقبل کی یادداشت کے لیے ہے جبکہ محدود یادداشت سے مستقل یادداشت تک معلومات منتقل کرنے والا ایک اور حصہ ہے اور یہی حصہ سب سے آخر میں سوتا ہے اور سب سے پہلے جاگتا ہے۔

تحقیق کے مطابق جب آدمی خواب دیکھتا ہے تو دیکھا جانے والا خواب اس کی محدود یادداشت میں محفوظ ہوتا ہے مگر جب اسے مستقل یادداشت میں منتقل کرنے کی باری آتی ہے تو معلومات منتقل کرنے والا حصہ سوجاتا ہے، یہی وجہ ہے کہ آدمی کو خواب یاد نہیں رہتے۔ ‘

ماہرین کے مطابق بعض لوگوں کو اپنے خوابوں کی پوری تفصیل یاد رہتی ہے، اس کی وجہ یہ بیان کی جاتی ہے کہ خواب دیکھنے کے بعد معلومات منتقل کرنے والا حصہ اچانک جاگ جاتا ہے تو خواب کی تفصیل محدود یادداشت سے مستقل یادداشت میں منتقل کردیتا ہے۔

تحقیق کے مطابق یہ کیفیت رات کے آخری پہر کے خوابوں کے ساتھ عام طور پر ہوتی ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک عام آدمی رات کے وقت 4 سے 7 خواب دیکھتا ہے۔

(Visited 91 times, 1 visits today)

Also Watch

?