سعودی ولی عہد کے خلاف قتل کا مقدمہ دائر

واشنگٹن: ترکی میں قتل کیے گئے سعودی صحافی کی منگیتر نے جمال خاشقجی کے قتل کا ذمے دار سعودی عرب ولی عہد کو ٹھہراتے ہوئے ان کے خلاف قتل کا مقدمہ دائر کردیا ہے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹس کے مطابق سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل کا مقدمہ واشنگٹن ڈی سی میں ان کی منگیتر خدیجے چنگیز نے دائر کیا، مقدمے میں الزام عائد گیا گیا ہے کہ جمال خاشقجی کو محمد بن سلمان کی ہدایت کے مطابق قتل کیا گیا، اس قتل کا مقصد عرب دنیا میں جمہوری اصلاحات کے لیے جمال خاشقجی کی امریکا میں کاوشوں کو روکنا تھا۔

یہ بھی پڑھیں :سعودی عرب قطر تنازع ختم کرنے میں بڑی پیشرفت

ترکی سے تعلق رکھنے والی مقتول صحافی کی منگیتر نے ویڈیو کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ اس مقدمے کا مقصد ایک امریکی عدالت کا ولی عہد شہزادے کو قتل کا ذمہ دار ٹھہرانا اور ان دستاویزات کا حصول ہے جن سے حقیقت ظاہر ہو، خدیجے چنگیز نے بتایا کہ جمال کا خیال تھا کہ امریکا میں کچھ بھی ممکن ہے اور میں انصاف اور احتساب کے حصول کے لیے امریکہ کے نظام عدل پر اعتماد کرتی ہوں، مقدمے میں جمال خاشقجی کی موت پر ہونے والے مالی نقصان کا دعویٰ بھی کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ سعودی حکومت کے ناقد خاشقجی کو ترکی کے شہر استنبول میں سعودی قونصل خانے کے اندر 2018 میں قتل کیا گیا تھا، تاہم سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان پہلے ہی جمال خاشقجی کے قتل کا حکم دینے کے الزامات کی تردید کرچکے ہیں۔

(Visited 111 times, 1 visits today)

Also Watch

?