طیارے میں کھانسنے والے شخص کے جراثیم کہاں تک پھیل سکتے ہیں؟

کرونا وائرس کے خلاف احتیاطی تدابیر میں سماجی فاصلے کو کلیدی اہمیت حاصل ہے، حال ہی میں ایک ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ ایک بند طیارے میں جہاں لوگ ایک دوسرے کے قریب بیٹھے ہوتے ہیں، کس طرح وائرس ایک سے دوسرے شخص میں منتقل ہوسکتا ہے۔

امریکی ریاست انڈیانا کی ایک یونیورسٹی کی جانب سے تیار کردہ اس جی آئی ایف میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کھانسی کے ذریعے جراثیم کس طرح توقعات سے زیادہ دور تک پھیل سکتے ہیں۔

اس جی آئی ایف میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کھانسی میں نکلنے والے تھوک کے قطروں سے جراثیم ہوا کے ذریعے پورے طیارے میں پھیل سکتے ہیں۔

کھانسنے والے شخص کے قریب بیٹھے کم از کم 10 افراد زیادہ خطرے میں ہوتے ہیں تاہم یہ جراثیم طیارے کے کیبن کے آخری سرے تک پہنچ سکتے ہیں۔

اس سے قبل جنوبی کوریا میں امریکی ماہرین کی جانب سے کی جانے والی ایک تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ ایک دفتر میں کھانسنے والا شخص اپنے 43 فیصد ساتھیوں کو جراثیم سے آلودہ کرسکتا ہے جس میں کرونا سمیت دیگر کئی وائرس ہوسکتے ہیں۔

خیال رہے کہ دنیا بھر میں کرونا وائرس سے اب تک 32 لاکھ سے زائد افراد متاثر ہوچکے ہیں جبکہ ہلاکتوں کی تعداد 2 لاکھ 28 سے تجاوز کرچکی ہے

(Visited 124 times, 1 visits today)

Also Watch