ماہر آثار قدیمہ کا حضرت عیسیٰ علیہ السّلام کا گھر دریافت کرنے کا دعویٰ

یروشلم: (ویب ڈیسک) برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ماہر آثار قدیمہ نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے سالوں کی کڑی محنت کے بعد حضرت عیسیٰ حضرت عیسیٰ علیہ السّلام کا گھر دریافت کر لیا ہے۔

یہ دعویٰ برطانیہ کے مشہور ماہر آثار قدیمہ پروفیسر کین ڈارک کی اجنب سے کیا گیا ہے جو کئی سالوں سے اسرائیل میں موجود ہیں، اور اس دریافت کی کھوج میں تھے۔ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ اسرائیل کے شہر ناصرہ میں قائم تاریخٰ چرچ ہی دراصل حضرت عیسیٰ حضرت عیسیٰ علیہ السّلام کا گھر ہے۔ اس گھر کو ایک قدرتی غار میں بنایا گیا تھا۔

عرب نیوز کے مطابق روفیسر کین ڈارک کا تعلق ریڈنگ یونیورسٹی سے ہے۔ انہوں نے 14 سال کی کڑی محنت کی، اس جگہ پر تحقیق کی تب کہیں جا کر وہ اس بارے میں کتاب لکھنے کے قابل ہوئے۔

خٰال رہے کہ اس گھر پر قائم مسیحیوں کی عبادت گاہ کو چوتھی صدی عیسوی میں رومیوں کے عیسائیت قبول کرنے کے بعد تعمیر کیا گیا تھا۔ اس دریافت کو تاریخ انسانی کا بہت بڑا کارنامہ قرار دیا جا رہا ہے۔
 

(Visited 97 times, 1 visits today)

Also Watch

?