International Court of Justice verdict against israel

عالمی عدالت نے اسرائیل کو خبردار کیا ہے کہ وہ مشرقی بیت المقدس کے نواحی قصبے خان الاحمر کو مسمار کرنے اور وہاں بسنے والے فلسطینیوں کو جبری ہجرت پر مجبور کرنے سے باز رہے ۔عالمی عدالت کی پراسیکیوٹر جنرل فاٹو بنسوڈا نے کہااگر تل ابیب نے انتباہ کے باوجود فلسطینی قصبہ مسمار کیا تو اسے جنگی جرم تصور کیا جائے گا۔عالمی عدالت انصاف نے خان الاحمر کی مسماری کیخلاف جاری کردہ فیصلے کے جواب میںاسرائیل کی اپیل مسترد کردی اور کہا کہ اسرائیل کے پاس اس قصبے کو مسمار کرنے اور وہاں پر بسنے والے فلسطینیوں کو بے دخل کرنے کا کوئی جواز نہیں۔ادھر قابض اسرائیلی فوج نے مغربی کنارے کے مختلف شہروں میں گھر گھر تلاشی کی کارروائیوں میں 10فلسطینیوں کو حراست میں لے لیا۔

اسرائیلی فوج کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیاہے کہ غرب اردن سے حراست میں لیے گئے بعض فلسطینی سکیورٹی اداروں کو مزاحمتی کارروائیوں میں پہلے ہی مطلوب تھ ۔ صیہونی فورسز نے مقبوضہ بیت المقدس میں جبل المکبر کے مقام پر ایک مکان مسمار کردیا ۔مقامی شہریوں نے بتایا کہ صہیونی فوج اورپولیس نے گھر میں موجود تمام افراد کو باہر نکالا اور اس کے بعد سامان نکالنے کی اجازت دئیے بغیر مکان بلڈوزروں کی مدد سے مسمار کر دیا،مقبوضہ مغربی کنارے کے جنوبی شہر الخلیل میں بھی اسرائیلی فوج نے خربہ المیہ کے مقام پر ایک مکان مسمار کردیا۔صہیونی فورسز کی کارروائی کے بعددرجنوں افراد کھلے آسمان تلے رہنے پر مجبور ہو گئے ۔دوسری طرف مصر نے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج کی بمباری اور فلسطینیوں کی طرف سے اسرائیلی تنصیبات پر راکٹ حملوں کے بعد کشیدگی کم کرانے کیلئے سفارتی محاذ پر کوششیں تیز کر دیں۔مقامی میڈیا کے مطابق مصری حکام نے غزہمیں فلسطینی مزاحمتی قوتوں پر زور دیا کہ وہ راکٹ حملوں سے گریز کریں ، صہیونی حکام پر بھی زور دیا گیا کہ وہ تحمل کا مظاہرہ کریں اور غزہ کی پٹی میں جنگ بندی معاہدے کی پاسداری کریں ۔

(Visited 560 times, 1 visits today)

Also Watch