jamal khashoggi cut into pieces and disolved in acid

ترکی کے ایک اعلی اہلکار اور صدارتی مشیر یاسین اکتے نے کہا ہے کہ انھیں یقین ہے کہ ۔ جمال خاشقجی کے جسم کے ٹکڑے کر کے تیزاب میں تحلیل کر دیے گئے

ان کے مطابق اِس معاملے کا ’منطقی نتیجہ‘ یہی اخز کیا جا سکتا ہے کہ جن لوگوں نے سعودی صحافی کو ہلاک کیا انھوں نے ان کے جسم کو ختم کر دیا تا کہ کوئی سراغ باقی نہ رہے۔

Loading...

تاہم اب تک ایسے کوئی فارینزک ثبوت فراہم نہیں کیے گئے کہ ان کے جسم کو تیزاب میں تحلیل کیا گیا۔

یاسین اکتے نے مقامی اخبار حریت ڈیلی کو بتایا ’خاشقجی کے جسم کے ٹکڑے کرنے کی وجہ یہ تھی کہ انھیں با آسانی تیزاب میں تحلیل کر دیا جائے۔‘

ترکی کے صدارتی مشیر کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب جمال خاشقجی کی منگیتر خدیجہ چنگیز نے عالمی رہنماوں سے اپیل کی ہے کہ ذمہ داروں کو انصاف کے کٹھرے میں لایا جائے۔

خاشقجی سعودی حکمرانوں کے بڑے ناقدین میں سے تھے جنھیں استنبول میں سعودی عرب کے سفارت خانے میں قتل کیا گیا۔

source:

https://www.independent.co.uk/news/world/middle-east/jamal-khashoggi-murder-latest-body-dissolved-turkey-erdogan-saudi-consulate-istanbul-a8614031.html

(Visited 237 times, 1 visits today)

Also Watch

LEAVE YOUR COMMENT